اردو نظمڈاکٹر وحید احمدشعر و شاعری

وہ دستکیں

ڈاکٹر وحید احمد کی ایک اردو نظم

وہ دستکیں

وہ دستکیں

جو تمہاری پوروں نے ان دروں میں انڈیل دی ہیں

وہ آج بھی

ان کے چوب ریشوں میں جاگتی ہیں

تمہارے قدموں کی چاپ

چپ ساعتوں میں بھی

ایک ایک ذرے میں بولتی ہے

تمہارے لہجے کے میٹھے گھاؤ سے

آج بھی

میرے گھر کا کڑیل چٹان سینہ چھنا ہوا ہے

کوئی نہ جانے

کہ ہنستے بستے گھروں کے اندر بھی

گھر بنے ہیں

جہاں مقفل ہیں بیتے لمحے

صبیح دن

اور ملیح راتیں

یہ واقعہ ہے

کہ جو علاقہ تمہارے جلووں کی زد میں آیا

اجڑ گیا ہے

اجاڑ آنگن تمہاری پہچان ہیں

یہاں

لوگ خود کو کیسے شناختیں گے

ڈاکٹر وحید احمد

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button