A True Salam To Urdu Literature

Zehan Mein Soorat E Gumaan

Urdu Ghazal By Mohsin Naqvi

ذہن میں صورتِ گماں ٹھہری
وہ نظر اس طرح کہاں ٹھہری؟

ہم نے جوبے خودی میں کہہ ڈالی
بات وہ زیبِ داستاں ٹھہری

پھول مانگو تو زخم دیتے ہیں
اب یہی رسمِ دوستاں ٹھہری

چاند کو دیکھ کر وہ یاد آئے
چاندنی میری رازداں ٹھہری

خواہشوں میں بکھر گئی محسنؔ
دوستی جنسِ رائیگاں ٹھہری

Leave A Reply

Your email address will not be published.

Recommended Salam
A Urdu Ghazal By Mohsin Naqvi