آپ کا سلاماردو غزلیاتاعجاز عزائیشعر و شاعری

ساعتِ صبر کرم لگتی ہے

ایک اردو غزل از اعجاز عزائی

ساعتِ صبر کرم لگتی ہے
اپنی غربت کا بھرم لگتی ہے

دکھ نہیں رزق کے کم ہونے کا
شکر ہے بھوک بھی کم لگتی ہے

ہر تمنا نہیں پوری ہوتی
ہر ضرورت میں رقم لگتی ہے

دو قدم چلتا ہوں تھک جاتا ہوں
اب مجھے زندگی کم لگتی ہے

جو دعا پوری نہ ہو کعبہ میں
شمع محرابِ حرم لگتی ہے

ٹیس تحریر میں ڈھل جائے تو
حسنِ قرطاس و قلم لگتی ہے

جس گلی میں میرا بچپن گزرا
مثلِ گلزارِ ارم لگتی ہے

مجھ سے رکھتا ہے کدورت جو بھی
بات اس کو مری سم لگتی ہے

لوٹ چلتے ہیں عزائی واپس
دنیا مصروفِ ستم لگتی ہے

(اعجاز عزائی)

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button