آپ کا سلاماردو شاعریاردو غزلیاتناصر زملؔ

شریکِ جرم نہ انجام تک گئے

ناصر زملؔ کی ایک اردو غزل

شریکِ جرم نہ انجام تک گئے
ہمارے جیسے تو الزام تک گئے

تری تلاش میں نکلے تو کھوئے خود
یوں صبح نکلے تو پھر شام تک گئے

سوال ایسے کہ مشکل تھے پوچھنے
بہانے گفت کے ہم نام تک گئے

خیالی دنیا سے آزادی پانے کو
چلے جو کام سے بس کام تک گئے

نہ من ہو پاک تو سجدے ہیں رائگاں
خدا کسے ملا احرام تک گئے ؟

بےجا ہی بیٹھے ہو یژمردہ تم زمل
وہ خاص خاص سو ہم عام تک گئے

 

ناصر زملؔ

ناصر زملؔ

ناصر زملؔ قلمی نام : زملؔ ضلع : وہاڑی ناصر زملؔ پاکستان ضلع وہاڑی سے تعلق رکھنے والے نوجوان شاعر ہیں ۔ انکا پہلا مجموعہ شاعری جنوری 2024 کو شائع ہوا جس کا نام "سحرِ بیاں" ہے جو " سرائے اُردو پبلیکیشن سیالکوٹ" پر دستیاب ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button