ادبی قصےحیدر علی آتشسلام اردو سپیشل

خواجہ حیدر علی آتش کے قصّے

خواجہ حیدر علی آتش کی دلچسپ داستانیں

خواجہ حیدر علی آتش کے قصّے

١) ایک شاگرد اکثر بے روزگاری کی شکایت سے سفر کا ارادہ ظاہر کیا کرتے تھے اور خواجہ صاحب اپنی آزاد مزاجی سے کہا کرتے تھے "اماں کہاں جاؤگے !دو گھڑی مل بیٹھنے کو غنیمت سمجھو -اور جو خدا دیتا ہے اس پر صبر کرو -ایک دن وہ آئے اور کہا کہ حضرت ! رخصت کو آیا ہوں -فرمایا خیر باشد ؟ کہاں ؟ انہونے کہا کل بنارس کو روانہ ہونگا -کچھ فرمائش ہو تو کہ دیجئے -آپ ہنسکر بولے اتنا کرنا کہ وہاں کے خدا کو ہمارا سلام کہنا -وہ حیران ہو کر بولے کہ حضرت ! یہاں اور وہاں کا خدا کو جدا ہے ؟ فرمایا کہ یہاں کا خدا بخیل ہے، وہاں کا شاید کچھ سخی ہو -انہونے کہا معاذ الله آپ کیا کہ رہے ہیں ؟ خواجہ صاحب نے کہا کہ بھلا سنو تو سہی ، جب خدا وہاں کا یہاں کا ایک ہے تو پھر ہمیں کیوں چھوڑتےہو، جو وہاں دیگا تو یہاں بھی دیگا –

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button