آپ کا سلاماردو شاعریاردو غزلیات

کماکے جو بھی لاتا ہے

غضنفر غضنی کی ایک اردو غزل

کماکے جو بھی لاتا ہے وہ گھر پہ وار دیتا ہے
کرائے دار کو گھر کا کرایہ مار دیتا ہے

تجھے معلوم ہے نا ہم کسی سے لڑ نہیں سکتے
ہمارے ہاتھ میں پھر کس لیے تلوار دیتا ہے

کسی کو گالیاں دینا شریفوں کا نہیں شیوہ
جو ہوتا ہے برا گالی وہی بدکار دیتا ہے

مجھے پکا یقیں ہے میں ترقی پاؤں گا اک دن
دعائیں رات دن مجھ کو مرا دلدار دیتا ہے

بہت تکلیف ہوتی ہے بہت روتا ہے دل غضنی
وفاؤں کے عوض دھوکا کوئی جب یار دیتا ہے

غضنفر غضنی

غضنفر غضنی

میرا نام غضنفر حسین میرا قلمی نام غضنی میں کراچی میں مقیم ہوں

۵ تبصرے

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button