- Advertisement -

ملنے نہ کبھی آیا جو ایک زمانے سے

غضنفر غضنی کی ایک اردو غزل

ملنے نہ کبھی آیا جو ایک زمانے سے
لے آیا اسے مطلب پھر آج بہانے سے

مصروف ہو کاموں میں آسکتے نہیں مانا
روکا ہے تمہیں کس نے اک کال ملانے سے

کس جرم کی دیتے ہیں یہ آپ سزا مجھ کو
کیا آپ کو ملتا ہے دل میرا دکھانے سے

رونے سے ترے واپس آنے نہیں والا وہ
کچھ بھی تو نہیں حاصل اب سوگ منانے سے

اللہ جسے چاہے رکھتا ہے سدا غضنی
مٹ سکتا نہیں کوئی دنیا کے مٹانے سے

غضنفر غضنی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
اویس خالد کا ایک اردو کالم