آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعریمحمود کیفی

رستے سے جو پتّھر کو ہٹا سکتا تھا

ایک اردو غزل از محمود کیفی

رستے سے جو پتّھر کو ہٹا سکتا تھا
اک شخص کی وہ جان بچا سکتا تھا

اب خود کو اُٹھایا نہیں جاتا اُس سے
وہ شخص جو ہر بوجھ اُٹھا سکتا تھا

اب پاس ہے ، لیکن نہیں سمجھا اُس نے
جو دُور سے اندازہ لگا سکتا تھا

مُلّا کو ہے جنّت کی تمنّا ، اور میں
شاعر تھا ، جہنّم میں بھی جا سکتا تھا

اب اُس کی بھی آنکھوں میں ہیں آنسو کیفی
وہ شخص بھی لوگوں کو ہنسا سکتا تھا

محمودکیفی

محمود کیفی

" مختصر تعارف " شاعر : محمود کیفی نام : محمودالحسن ولدیت : ظفراقبال تاریخ پیدائش : 23 فروری 1986ء گاؤں : گھُمنال ضلع : سیالکوٹ تحصیل : پسرور شعری مجموعے : " اِقرار محبت کا " اشاعت 2011ء / " کیفیت " اشاعت 2014 ء ۔ سینئر نائب صدر : بزمِ دوستانِ ادب سیالکوٹ ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button