- Advertisement -

Humain Jazeera Amkaan

Urdu Poetry by Rafique Lodhi

ہمیں جزیرہ ء امکان تک پہنچنا ہے
کسی اداسی کے سامان تک پہنچنا ہے

مرا عدم کسی زنجیر کا اشارہ ہے
مرے وجود کو زندان تک پہنچنا ہے

بہت ہی دیکھتے ہو خواب میں بیاباں کو
ابھی تو ہاتھ گریبان تک پہنچنا ہے

تمہیں تو نیند مبارک ہے منزلوں والو
ہمیں تو خواب ِ پریشان تک پہنچنا ہے

سر ِ نگاہ بدلتے رہے چراغ ِ سخن
ہمیں تو میر کے دیوان تک پہنچنا ہے

ابھی چراغ تلے مستقل اندھیرا ہے
ابھی شعور کو انسان تک پہنچنا ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
ایک اردو غزل از بلال اسعد