A True Salam To Urdu Literature

Khawahishoon Ki Kitab Thay

An Urdu Ghazal By Iqbal Tariq

خواہشوں کی کتاب تھے جب تھے
زندگی کا نصاب تھے جب تھے

اپنی اُنگلی پکڑ کے چلتے تھے
خود کو ہم دستیاب تھے جب تھے

اپنی آنکھوں میں اب کھٹکتے ہیں
چشمِ یاراں کاخواب تھے جب تھے

طاق ماضی کے یہ اداس دئیے
شوق میں آفتاب تھے جب تھے

اب میسر نہیں ہیں خود کو بھی
ہم ترے بے حساب تھے جب تھے

یہ جو آنکھیں بجھی بجھی ہیں ناں
ان میں بھی چند خواب تھے جب تھے

اب جو سُوکھے پڑے ہیں قبروں پر
یہ بھی تازہ گُلاب تھے جب تھے

اقبال طارق

Leave A Reply

Your email address will not be published.

Recommended Salam
An Urdu Column By Hayat Abdullah