- Advertisement -

Hijar Moujood He Fasany Main

An Urdu nazam by Faisal Ajmi

ہجر موجود ہے فسانے میں

سانپ ہوتا ہے ہر خزانے میں

رات بکھری ہوئی تھی بستر پر

کٹ گئی سلوٹیں اٹھانے میں

رزق نے گھر سنبھال رکھا ہے

عشق رکھا ہے سرد خانے میں

رات بھی ہو گئی ہے دن جیسی

گھر جلانے کے شاخسانے میں

روز آسیب آتے جاتے ہیں

ایسا کیا ہے غریب خانے میں

ہو رہی ہے ملازمت فیصل

رائگانی کے کارخانے میں

فیصل عجمی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
An Urdu ghazal by Faisal Ajmi