آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعریکاشف حسین غائر

نشّۂ غم ہے اور ہم ہیں بس

کاشف حسین غائر کی ایک اردو غزل

نشّۂ غم ہے اور ہم ہیں بس
ایک عالم ہے اور ہم ہیں بس

عشق میں یار یہ من و تُو کیا
لفظ اک ’ہم‘ ہے اور ہم ہیں بس

حاصلِ جستجو نہیں معلوم
سعیِ پیہم ہے اور ہم ہیں بس

تیرا عکسِ خیال ہے اور دل
دیدۂ نم ہے اور ہم ہیں بس

یہ ہَوا یہ چراغِ جاں غائر
بس کوئی دم ہے اور ہم ہیں بس

کاشف حسین غائر

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button