اردو غزلیاتاسماعیلؔ میرٹھیشعر و شاعری

واں زیرکی پسند نہ ادراک چاہئے

اسماعیلؔ میرٹھی کی ایک اردو غزل

واں زیرکی پسند نہ ادراک چاہئے

عجز و نیاز دیدۂ نمناک چاہئے

آئینہ بن کہ شاہد و مشہود ایک ہے

اس روئے پاک کو نظر پاک چاہئے

سیر و سلوک جاں نہیں بے جذبۂ نہاں

اس راہ میں یہ توسن چالاک چاہئے

گزرے امید و بیم سے یہ حوصلہ کسے

رند خراب و عارف بے باک چاہئے

ہر چشمہ آئنہ ہے رخ آفتاب کا

ہاں سطح آب بے خس و خاشاک چاہئے

نشو و نمائے سبزہ و گل میں نہیں درنگ

ابر کرم کو تشنگیٔ خاک چاہئے

اصلاح حال عاشق دل خستہ ہے ضرور

معشوق جور پیشہ و سفاک چاہئے

جو عین نائے نوش ہو اس بادہ نوش کو

جام و سبو نہ خمکدہ و تاک چاہئے

صیاد کے اثر پہ رواں ہو تو صید ہے

وہ صید ہی نہیں جسے فتراک چاہئے

اسماعیلؔ میرٹھی

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button