A True Salam To Urdu Literature

Lafz Mere Meri Tehreer

An Urdu Ghazal By Malik Ateeq

لفظ میرے مری تحریر نہیں رہنی ہے
جب میری بات میں تاثیر نہیں رہنی ہے

نقش جتنے ہیں بگڑنے کے لیے ہیں مرے دوست
اس جہاں میں کوئی تصویر نہیں رہنی ہے

ایک گھر میں نے بنانا ہے تمہارے دل میں
پھر مجھے حسرت تعمیر نہیں رہنی ہے

میں نہتا بھی اگر الجھوں گا ترے لشکر سے
میرے دشمن تری توقیر نہیں رہنی ہے

مجھ کو معلوم نہیں تھا کہ دیا بجھتے ہی
ان ستاروں میں بھی تنویر نہیں رہنی ہے

یہ تماشا بھی بالآخر سمٹ آنا ہے عتیق
ایک دن خواب کی تعبیر نہیں رہنی ہے

Leave A Reply

Your email address will not be published.

Recommended Salam
A Ghazal By Malik Ateeq