A True Salam To Urdu Literature

Kabhi Badan Kabhi Bistar

An Urdu Ghazal By Malik Ateeq

کبھی بدن کبھی بستر بدل کے دیکھا ہے
سکوں کہیں بھی نہیں گھر بدل کے دیکھا ہے

کسی طرح بھی یہ وحشت نظر سے جاتی نہیں
کئی طرح سے وہ منظر بدل کے دیکھا ہے

وہ کون ہے میں جسے خوش نصیب لگتا ہوں
یہ کس نے میرا مقدر بدل کے دیکھا ہے

یونہی تو موجئہ پایاب سے نہیں ڈرتے
شناوروں نے سمندر بدل کے دیکھا ہے

تیرے خیال سے ہٹتا نہیں ہے دھیان مرا
ہر ایک سوچ کا محور بدل کے دیکھا ہے

Leave A Reply

Your email address will not be published.

Recommended Salam
An Urdu Ghazal By Malik Ateeq