آپ کا سلاماردو غزلیاتذوالقرنین حسنیشعر و شاعری

یوں بھی کچھ وقت گزارا

ذوالقرنین حسنی کی اردو غزل

یوں بھی کچھ وقت گزارا کسی رسوائی میں گم
اچھی کٹ جائے گی پھر یاد کی شہنائی میں گم

تیرے ہنسنے سے ابھر آیا ہوں ویسےکہیں تھا
پورے منظر سے الگ بات کی گہرائی میں گم

ہم ہیں اس عہد_جواں۔ مرگ میں بوڑھے کاذب
ہم نے رہنا ہے نئی۔ بات کی پسپائی میں گم

ایک انبوہ_عجب رنگ ہے مجھ میں۔ محصور
ہر بصارت سے الگ۔ تیری پذیرائی میں گم

یہ اندھیرا ہے کسی ماہ_ درخشاں کا بھرم
میں ہوں بیدار مگر رات کی دانائی میں گم

مجھے مل جائے تو ماتھے پہ کروں پیار۔ اسے
ہائے وہ شخص ہوا ہے میرے ہرجائی میں گم

یہ وبا اتنی بھی مہلک نہ بنا ڈر ہے۔ مجھے
کوئی باقی نہ۔ بچے منظر و۔ بینائی میں گم

ذوالقرنین حسنی

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button