- Advertisement -

Yeh Hum Ko Kon Si Duniya

An Urdu Ghazal By Abbas Tabish

یہ ہم کو کون سی دنیا کی دھن آوارہ رکھتی ہے

کہ خود ثابت قدم رہ کر ہمیں سیارہ رکھتی ہے

اگر بجھنے لگیں ہم تو ہوائے شام تنہائی

کسی محراب میں جا کر ہمیں دوبارہ رکھتی ہے

چلو ہم دھوپ جیسے لوگ ہی اس کو نکال آئیں

سنا ہے وہ ندی تہہ میں کوئی مہ پارہ رکھتی ہے

ہمیں کس کام پر مامور کرتی ہے یہ دنیا بھی

کہ ترسیل غم دل کے لیے ہرکارہ رکھتی ہے

کبھی سر پھوڑنے دیتی نہیں دیوار سے تابشؔ

یہ کیا دیوانگی ہے جو ہمیں ناکارہ رکھتی ہے

عباس تابش

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
An Urdu Ghazal By Abbas Tabish