A True Salam To Urdu Literature

Yeh Baazgusht

A Ghazal By Munir Jafri

یہ باز گشت جو سب کو سنائی جاتی ہے
یہ روشنی مرے کمرے سے لائی جاتی ہے

میں چاہتا ہوں مرا پھول خود پکارے مجھے
وگرنہ شاخ تو کیا کیا جھکائی جاتی ہے

میں خود کفیل اداسی کا پہلا وارث ہوں
یہ فصلِ گل بھی مجھی سے اگائی جاتی ہے

جنوں میں خاک اڑاؤ فغاں بلند کرو
ہمارے عشق کی میت اٹھائی جاتی ہے

یہ کائنات تو کچھ بھی نہیں زمیں بھی منیر
ہمارے پاؤں کے نیچے گھمائی جاتی ہے

منیر جعفری

Leave A Reply

Your email address will not be published.

Recommended Salam
A Ghazal By Munir Jafri