آپ کا سلاماردو شاعریاردو غزلیاتشہناز رضوی

حیران ہیں سبھی تِری تنویر دیکھ کر

شہناز رضوی کی ایک اردو غزل

حیران ہیں سبھی تِری تنویر دیکھ کر
تیری یہ شان و شوکت و توقیر دیکھ کر

تیرا ہی عکس ہم کو نظر آئے چار سُو
یہ حُسن اور حُسن کی تاثیر دیکھ کر

حُسن و جمال کی بھی کوئی انتہا نہیں
بےخود سے ہو گئے تِری تصویر دیکھ کر

جنّت نظیر وادِیاں ، پُرکیف نظارے
آنکھوں کو ٹھنڈ ملتی ہے کشمیر دیکھ کر

دیکھا ہے خواب میں تُجھے جاہ و جلال میں
بتلائے کوئی خواب کی تعبیر دیکھ کر

ہم پر نہ کوئی دبدبہ قائم ہُوا کبھی
جاگیر دار تیری یہ جاگیر دیکھ کر

بھر آتی ہیں “شہناز“ بتا کیوں تِری آنکھیں
راہ چلتے ہُوئے بھی کوئی دلگیر دیکھ کر

 شہناز رضوی

شہناز رضوی

نام :: شہناز رضوی تخلُّص :: شہناز سکونت :: کراچی پاکستان ادبی خدمات :: آن لائن طرحی مُشاعروں میں فیس بُک کے 9 گروپس میں 2013 سے شرکت کر رہی ہوں ۔ ایک شعری مجموعہ “ متاعِ زیست “ کے نام سے 2019 میں منظرِ عام پہ آ چُکا ہے ۔ اور اب دوسرا مجموعہ حمد و نعت کے حوالے سے بہت جلد آنے والا ہے ان شا اللہ ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button