A True Salam To Urdu Literature

Dust-O-Paa Maray

An Urdu Ghazal By Mir Taqi Mir

دست و پا مارے وقت بسمل تک
ہاتھ پہنچا نہ پائے قاتل تک

کعبہ پہنچا تو کیا ہوا اے شیخ
سعی کر ٹک پہنچ کسی دل تک

درپئے محمل اس کے جیسے جرس
میں بھی نالاں ہوں ساتھ منزل تک

بجھ گئے ہم چراغ سے باہر
کہیو اے باد شمع محفل تک

نہ گیا میرؔ اپنی کشتی سے
ایک بھی تختہ پارہ ساحل تک

Leave A Reply

Your email address will not be published.

Recommended Salam
An Urdu Ghazal By Irshad Niazi