آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعری

چل پڑی ایسی ہوا

ایک اردو غزل از شہلا خان

چل پڑی ایسی ہوا خاک اڑانے والی
راہ میں جلتے چراغوں کو بجھانے والی

زرد موسم کی تپش سے یوں پریشان نہ ہو
اسکی رحمت ہے بہت جوش میں آنے والی

ایسی تمثیل کوئی ہو تو میں واضح کر دوں
دریا کے بارے میں ، صحرا کو بتانے والی

کافی دلچسپ سی ہوتی ہیں ادھوری باتیں
سرد پانی پہ بہت آگ لگانے والی

تیری مرضی ہے مجھے غیر سمجھ لے لیکن
میں ترا ساتھ نہیں چھوڑ کے جانے والی

میں بھی لوگوں سے ذرا دور رہا کرتی ہوں
اسکی عادت بھی نہیں ملنے ملانے والی

کچھ تصاویر تو البم کے لیے ہوتی ہیں
اور چند ایک فریموں میں سجانے والی

شہلا خان

شہلا خان یوسف زئی

نام : شہلا خان یوسف زئی شہر : کراچی تعلیم : ماسٹرز (اردو ادب )

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button