آپ کا سلاماردو شاعریاردو غزلیاتناصر زملؔ

یا خود پی یا پلا کے دیکھ

ناصر زملؔ کی ایک اردو غزل

یا خود پی یا پلا کے دیکھ
تو اپنا گھر جلا کے دیکھ

یوں ہوش میں تو آ کے دیکھ
یہ چشمِ نم چھپا کے دیکھ

بنا کے خود مٹا کے دیکھ
یہ حوصلے خدا کے دیکھ

نجانے کب ہو معجزہ
قدم قدم بڑھا کے دیکھ

سکون کب کہاں ہے جان
دیے سبھی بجھا کے دیکھ

کہاں کہاں چھپے ہیں غم
کسی کے دل میں جا کے دیکھ

مری طرف نگاہ کر
مریض پھر جفا کے دیکھ

تو رازداں زمانہ ہے
ہمیں بھی کچھ بتا کے دیکھ

علی کی گود میں نبی
یہ معجزے قضا کے دیکھ

کھلے گا پھر نظر کا دکھ
نظر کہیں ملا کے دیکھ

انا کو چھوڑ خلد تک
ضمیر کو ہرا کے دیکھ

وہ اب تلک ہے شادماں
زمل ستم وفا کے دیکھ

 

ناصر زملؔ

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button