اردو غزلیاتاسماعیلؔ میرٹھیشعر و شاعری

ذرا غم زدوں کے بھی غم خوار رہنا

اسماعیلؔ میرٹھی کی ایک اردو غزل

ذرا غم زدوں کے بھی غم خوار رہنا

کریں ناز تو ناز بردار رہنا

فراخی و عسرت میں شادی و غم میں

بہرحال یاروں کے تم یار رہنا

سمجھ نردباں اپنی ناکامیوں کو

کہ ہے شرط ہمت طلب گار رہنا

کرو شکر ہے یہ عنایت خدا کی

بلاؤں میں اکثر گرفتار رہنا

اگر آدمی کو نہ ہو مشغلہ کچھ

بہشت بریں میں ہو دشوار رہنا

خبر بھی ہے آدم سے جنت چھٹی کیوں

خلاف جبلت تھا بے کار رہنا

سمجھتے ہیں شیروں کو بھی نرم چارہ

غزالان شہری سے ہشیار رہنا

اسماعیلؔ میرٹھی

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button