آپ کا سلاماردو غزلیاتبلال اسعدشعر و شاعری

انعام یافتہ بھی خطاوار بھی ہوا

ایک اردو غزل از بلال اسعد

انعام یافتہ بھی خطاوار بھی ہوا
اقرار کی طرح مرا انکار بھی ہوا

پتھر ضرور ہو گیا کارِ طلسم سے
اندر ہی اندر آئنہ مسمار بھی ہوا

وہ خواب جن کو آپ ذخیرہ کیے رہے
کیا کوئی شخص ان کا خریدار بھی ہوا

یہ اور بات دیکھنے والا کوئی نہ تھا
اک نقش ورنہ دل پہ نمودار بھی ہوا

جلتے ہوئے بدن پہ محبت کا سایہ تھا
یعنی خزاں بھی آئی ثمر بار بھی ہوا

میرے وجود کا مجھے ادراک ہونے تک
پرشور بھی رہا میں پراسرار بھی ہوا

سینہ سِپر رہا میں حقیقت کے سامنے
ہر چند خواب مجھ پہ گراں بار بھی ہوا

اسعد میں نرم خو بھی تھا برہم مزاج بھی
در بھی ہوا کبھی،کبھی دیوار بھی ہوا

بلال اسعد

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button