A True Salam To Urdu Literature

Waapsi

An Urdu Nazam By Aashufta Changezi

واپسی

اذیت اور اس سکوں

دونوں کو ہی دل کھول کے میں نے لٹایا ہے

ہزاروں بار ایسا بھی ہوا ہے

دوستوں کی رہنمائی میں

پھرا ہوں مارا مارا

شہر کی آباد سڑکوں پر

کبھی ویران گلیوں میں

کبھی صحراؤں کی بھی خاک چھانی ہے

مگر اس بار جانے کیا ہوا مجھ کو

نمائش کی دکانوں میں

سجا کر خود کو گھر واپس چلا آیا

ابھی دروازہ میں نے کھٹکھٹایا تھا

کہ گھر والوں نے کینہ توز نظروں سے مجھے دیکھا

جب ان کی آنکھوں میں،

کوئی رمق پہچان کی میں نے نہیں پائی

تو الٹے پیروں واپس لوٹ آیا ہوں

اور اب یہ سوچتا ہوں

دوستوں کی رہنمائی میں

انہیں گلیوں میں صحراؤں میں جا کر

اپنے قدموں کے نشاں ڈھونڈوں

Leave A Reply

Your email address will not be published.

Recommended Salam
An Urdu Nazam By Aashufta Changezi