- Advertisement -

Hojaye Ga Jis Ko Bhi Dedaar Mohabbat

A Beautiful Natia Kalaam Ishaq Sajid

ہو جائے گا جس کو بھی دیدار محمد کا

فردوس میں جائے گا بیمار محمد کا

جو نام فقط لے گا اک بار محمد کا

بھرے گا وہ دامن میں سب پیار محمد کا

جنت کی ہواؤں کی سانسوں میں مہک ہو گی

جس دِل میں بسا ہو گا گلزار محمد کا

پڑھتا ہے مسلسل جو ہر روز درُود اُن پر

ہوتا ہے فدا اُس پر گھر بار محمد کا

دُنیا بھی اُسی کی ہے عُقبیٰ بھی اُسی کا ہے

جس دِل کو لگا ہو گا ازار محمد کا

رستہ بھی نہ بھٹکے گا منزل پہ بھی پہنچے گا

ہو جس کی نگاہوں میں کردار محمد کا

تھا قیصر و کسریٰ کے دربار سے بھی اعلی

لگتا تھا جو حجرے میں دربار محمد کا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
An Afsana By Mariyam Tasleem Kiyani