آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعری

وعدہ بھی اُس نے سوچ کے

ناصرہ زبیری کی ایک اردو غزل

وعدہ بھی اُس نے سوچ کے کرنے نہیں دیا
اور اُس کے بعد مُجھ کو مُکرنے نہیں دیا

منزل تمام عمر مرے سامنے رہی
اک راستے نے مجھ کو گزرنے نہیں دیا

بے خوف کر دیا ہمیں تعویزِ عشق نے
رُسوائی کی بلاؤں سے ڈرنے نہیں دیا

ایسا عبور تھا کسی پتھر کو ٹھیس پر
آئینہ توڑ کر بھی بکھرنے نہیں دیا

مہماں کیا تھا دل نے محبت کو ایک بار
بارِ دگر کسی کو ٹھہرنے نہیں دیا

وہ چاہتے تھے ، کُوچ یہاں سے کریں مگر
اِذنِ سفر غموں کو ، جگر نے نہیں دیا

جس سرزمیں کے حسن پہ نازاں رہے سبھی
اُس سرزمیں کا حسن سنورنے نہیں دیا

ناصرہ زبیری

ناصرہ زبیری

ناصرہ زبیری صحافی ، شاعرہ اور کالم نگار کی حیثیت سے جانی جاتی ہیں ۔ڈیلی بزنس ریکارڈر، جیو نیوز ، آج نیوز ، انڈیپنڈنٹ اُردو اور “ہم سب” ان کے کام کا حوالہ ہیں ۔ میڈیا کی دنیا میں واحد خاتون صحافی ہیں جنہوں نے دو نیوز چینلز کو لانچ کیا - وہ پاکستان کے کسی بھی نیوز چینل میں کنٹرولر نیوز، ڈائریکٹر نیوز اور چیف آپریٹنگ آفیسر ( COO) جیسے اعلی اور حساس عہدوں تک رسائ حاصل کرنے والی پہلی خاتون ہیں ۔ پاکستان کے دو بڑے نیوز چینل ، آج نیوز اور نیوز ون کا آغاز اور ان دونوں اداروں کو کامیابی سے ہمکنار کرنے کا ابتدائ مشکل کام ناصرہ زبیری کی قیادت میں ہی انجام پایا ۔ اس سے پہلے جیو نیوز کی لانچنگ ٹیم کا حصہ بھی رہیں اور بزنس نیوز کی سربراہ کی ذمہ داریاں نبھاتے ہوے جیو نیوز پر بزنس بلیٹن کا آغاز کیا اور کامیابی سے چلایا۔ آج کل میڈیا کی صنعت میں ان کے تربیت یافتہ ورکروں کی تعداد درجنوں میں ہے جو مختلف چینلز میں نیوز کاسٹرز ، کاپی رائٹرز ، اینکرز اور پروڈیوسرز کی حیثیت سے کام کر رہے ہیں ۔ اس سے پہلے پرنٹ کی دنیا میں دس سال سے زائد عرصے تک روز نامہ " بزنس ریکارڈر " سے وابستہ رہیں اور سینئر صحافی کے طور پر اسلام آباد میں تمام اہم وزارتوں اور اداروں بشمول پارلیمنٹ اور سینیٹ کی کوریج انجام دیتی رہیں ۔ لاہور سے تعلق رکھنے والی ناصرہ زبیری نے لاہور یونیورسٹی سے ایم ۔ اے اکنامکس کی تعلیم حاصل کی ۔ تعلیم سے فارغ ہو کر فائینننشل جرنلز م جیسے مشکل شعبے کا انتخاب کیا ۔ صحافتی زندگی میں کئی ملکی اور غیر ملکی میڈیا کانفرنس میں شرکت کا موقع ملا ۔ (ادب ) ادب کے میدان میں ناصرہ زبیری کے تین مکمل شعری مجموعے (1) شگون (2) کانچ کا چراغ (3) تیسرا قدم چھپ کر مارکیٹ میں موجود ہیں ۔ آج کل دو اور کتابوں پر کام جاری ہے ۔ غزل اور نظم پر مشتمل ان کے کلام کو سراہا جاتا رہا ہے اور صف ِ اوّل کے شعرا ، نامور نقاد اور سنجیدہ قارئین ان کی شاعرانہ صلاحیتوں کا برملا اظہار کر چکے ہیں جن میں احمد فراز ، ظفر اقبال ، شبنم شکیل ، محمد علی صدیقی ، انور شعور ،سرمد صہبائی ، شمیم حنفی ، مظہر الاسلام ، اصغر ندیم سید ، ناصر عباس نیّر ، حسن نثار ، عطاالحق قاسمی ، ڈاکٹر خورشید رضوی ، شاہدہ حسن ، حمید شاہد ، فاطمہ حسن ، میر احمد نوید اور ڈاکٹر پیر زادہ قاسم جیسی قد آور شخصیات شامل ہیں ۔ الحمد اسلامک یونیورسٹی نے ان کے فن پر ایم فل کا مقالہ تیار کروایا ہے۔، آج کل ان کے کام پر دو مزید پی ایچ ڈی مقالے لکھنے کا کام ہو رہا ہے ۔ کالم نگاری میں ناصرہ زبیری کے “ انڈیپنڈنٹ اُردو “ اور “!ہم سب “!میں مستقل کالم چھپتے رہے ہیں جو نیٹ پہ دستیاب ہیں ۔ پچھلے کئی سال سے کراچی آرٹس کونسل ، کراچی لٹریچر فیسٹول ، اسلام آباد لٹریچر فیسٹول ، فیصل آباد لٹریری فیسٹول اور جشنِ جون ایلیا میں بطورِ سپیکر ، ناظم اور شاعرہ شامل رہی ہیں ۔ پاکستان کے علاوہ ، لندن ، برمنگھم ، بریڈفورڈ ، بون ، برلن ، فرینکفرٹ ، نیو دہلی ، کوالالمپور ، پیرس ، ڈنمارک اور بہت سے شہروں میں کلام سُنانے اور میڈیا کانفرنس میں شرکت کرنے کے مواقع حاصل رہے ہیں ۔ اپنے پروفیشن کے سلسلے میں اور ذاتی حیثیت سے باہر کی دنیا کے سفر کر چکی ہیں ۔ “آج نیوز “نیٹورک کے چیف آپریٹنگ آفیسر شہاب زبیری کی اہلیہ اور تین بچوں کی ماں ہیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button