- Advertisement -

Tan Sulagta Hai

An Urdu Ghazal By Saghar Saddiqui

ساغر صدیقی
انتظارِ نظر

تن سلگتا ہے من سلگتا ہے

جب بہاروں میں من سلگتا ہے

نوجوانی عجیب نشہ ہے

چھاؤں میں بھی بدن سلگتا ہے

جب وہ محو خرام ہوتے ہیں

انگ سرو سمن سلگتا ہے

جانے کیوں چاندنی میں پچھلے رات

چپکے چپکے چمن سلگتا ہے

تیرے سوزِ سخن سے اے ساغر

زندگی کا چلن سلگتا ہے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
An Urdu Ghazal By Saghar Saddiqui