آپ کا سلاماردو شاعریاردو نظمعاصمہ فراز

رات کا پچھلا پہر

عاصمہ فراز کی اردو نظم

رات کا پچھلا پہر ہے جاناں
تیری یاد کے بستر پر ہم
تنہا ،گم سم ، آنکھیں موندے
تجھ کو ہی تو
سوچ رہے ہیں
دن کے ہنگاموں میں کھو کر
تیرے بن بھی جی لیتے ہیں
لیکن جاناں !
شب کے اس پل چپکے چپکے
آنکھ سے بہنے والے آنسو
تجھ کو ہر سُو
کھوج رہے ہیں

عاصمہ فراز

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button