آپ کا سلاماردو شاعریاردو غزلیاتناصر زملؔ

اسکے پھولوں کو سنبھالے رکھنا

ناصر زملؔ کی ایک اردو غزل

اسکے پھولوں کو سنبھالے رکھنا
غم کی راتوں میں اجالے رکھنا

بے وقوفوں سی ہے حرکت یہ تو
سانپ پہلو میں ہی پالے رکھنا

میرے نزدیک محبت یہ ہے
دل بے دردوں کے حوالے رکھنا

تیری عادت ہے یہ تُو کر پوری
ایک ہی بات اچھالے رکھنا

خواہشِ لمس ہی پوری نہ ہوئی
اسکا بس کام ہے ٹالے رکھنا

سمجھے کیسے کوئی دکھ مفلسی کا
صبح کے شام نوالے رکھنا

دینے والا ہے وہ دستک سو زمل
دل کے دروازے پہ تالے رکھنا

 

ناصر زملؔ

ناصر زملؔ

ناصر زملؔ قلمی نام : زملؔ ضلع : وہاڑی ناصر زملؔ پاکستان ضلع وہاڑی سے تعلق رکھنے والے نوجوان شاعر ہیں ۔ انکا پہلا مجموعہ شاعری جنوری 2024 کو شائع ہوا جس کا نام "سحرِ بیاں" ہے جو " سرائے اُردو پبلیکیشن سیالکوٹ" پر دستیاب ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button