A True Salam To Urdu Literature

Us Ki Batoon Se Mein Ne

An Urdu Ghazal By Munazza Syed

اس کی باتوں سے میں نے پرکھا تھا
وہ بھی میری طرح اکیلا تھا

چند جگنو تھے میری مٹھی میں
اور چاروں طرف اندھیرا تھا

پاؤں شل ہو گئے جہاں آ کر

قافلے کو وہیں سے چلنا تھا

دل کے اندر تھی خامشی لیکن
میرے کانوں میں شور برپا تھا

گرچہ شاعر نہیں تھا وہ پھر بھی
میر و غالب , فراز جیسا تھا

اپنے ہاتھوں میں لے کے زخمی ہاتھ
میرا ہر درد اس نے بانٹا تھا

لوگ کہتے ہیں داستانوں میں
وقت گزرا ہوا ہی اچھا تھا

وہ جو روتا ہے چاند راتوں میں
اس نے شاید کسی کو چاہا تھا

منزہ سید

Leave A Reply

Your email address will not be published.

Recommended Salam
A Short Urdu Nazam By Injila Hamesh