- Advertisement -

تمھارے ساتھ میں ہوں

ایک نظم از حسن فتحپوری

اگر تم کو یہ لگتا ہے
کہ تم بالکل اکیلے ہو
تو پھر ایسا کرو
تم اپنے لان میں جاو
وہاں پھولوں کے پودے ہیں
کھلے ہیں پھول بھی ان میں
وہیں اک خوشمنا گل ہے
وہ میں ہوں

اندھیری رات میں چھت پر
چمکتے چاند کو دیکھو
وہیں پر اک ستارہ ہے
وہ میں ہوں

پرندے صبح جب آکر
ہر اک سو چہچہاتے ہیں
تمھاری چھت پہ آکر اک پرندہ بیٹھ جاتا ہے
مسلسل چہچہاتا ہے
وہ میں ہوں

سفر پہ جب بھی جاو
کڑکتی دھوپ سے بچنے کی خاطر
کسی بھی پیڑ کے سائے میں آکر
بیٹھ جانا…. سکوں تم کو ملے گا
وہ سایہ کچھ نہیں….. میں ہوں

کبھی خود کو اکیلا مت سمجھنا
بزرگوں کی دعا جیسے

تمھارے ساتھ… میں ہوں

حسن فتحپوری

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
ایک اردو غزل از حسن فتحپوری