آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعری

محبت میں جو وعدوں کو

عائشہ قمر کی ایک اردو غزل

محبت میں جو وعدوں کو نبھانا چھور دیتے ہیں
وہ خودغرضی میں گرتے کو اٹھانا چھوڑ دیتے ہیں

خدا آگاہ رکھے جن کو عالم کی حقیقت سے
تو وہ لوگوں کو دانستہ گرانا چھوڑ دیتے ہیں

خدا کے جن بھی بندوں پر خدا کے راز افشا ہوں
تو وہ فانی جہاں میں دل لگانا چھوڑ دیتے ہیں

میسر اپنا ہو جن کو کبھی جو بات کرنے کو
وہ بزمِ دوستاں میں غم سنانا چھوڑ دیتے ہیں

مصیبت کو بھی جو عاشی سمجھتے ہیں رضا رب کی
یونہی وہ آسماں سر پر اٹھانا چھوڑ دیتے ہیں

 

عائشہ قمر

عائشہ قمر

عائشہ قمر ۔ سیالکوٹ ۔ شاعرہ، افسانہ نگار، کالم نگار۔ طالب علم (بی - اے)

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button