اردو نظمرام پرساد بسملشعر و شاعری

مٹ گیا جب مٹنے والا

رام پرساد بسمل کی ایک اردو نظم

مٹ گیا جب مٹنے والا پھر سلام آیا تو کیا!
دل کی بربادی کے بعد انکا پیام آیا تو کیا!

مٹ گئیں جب سب امیدیں مٹ گئے جب سب خیال،
اس گھڑی گر ناماور لیکر پیام آیا تو کیا!

اے دلے-نادان مٹ جا تو بھی کوُ-اے-یار میں،
پھر میری ناکامییوں کے بعد کام آیا تو کیا!

کاش! اپنی زندگی میں ہم وو منجر دیکھتے،
یوں سرے-تربت کوئی محشر-کھرام آیا تو کیا!

آخری شب دید کے قابیل تھی بسمل کی تڑپ،
سبھ-دمھ کوئی اگر بالا-اے-باما آیا تو کیا!

(پیام=سنیہا، ناماور=ڈاکیا، کوُ=گلی، منجر=
نظارہ، سرے-تربت=میری قبر تے، محشر-کھرام=
چال نال پرلو لیاؤن والا، شب=رات، )

نوٹ=اس رچنا نوں رام پرساد بسمل دی اخیری رچنا
منیاں جاندا ہے ۔

 

رام پرساد بسمل

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button