- Advertisement -

Maut Kabhi Bhi

An Urdu Ghazal By Sahir Ludhianvi

موت کبھی بھی مل سکتی ہے لیکن جیون کل نہ ملے گا

مرنے والے سوچ سمجھ لے پھر تجھ کو یہ پل نہ ملے گا

کون سا ایسا دل ہے جہاں میں جس کو غم کا روگ نہیں

کون سا ایسا گھر ہے جس میں سکھ ہی سکھ ہے سوگ نہیں

جو حل دنیا بھر کو ملا ہے کیوں تجھ کو وہ حل نہ ملے گا

مرنے والے سوچ سمجھ لے پھر تجھ کو یہ پل نہ ملے گا

اس جیون میں کتنے ہی دکھ ہوں لیکن سکھ کی آس تو ہے

دل میں کوئی ارمان بسا ہے آنکھ میں کوئی پیاس تو ہے

جیون نے یہ پھل تو دیا ہے موت سے یہ بھی پھل نہ ملے گا

مرنے والے سوچ سمجھ لے پھر تجھ کو یہ پل نہ ملے گا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
An Urdu Ghazal By Sahir Ludhianvi