آپ کا سلاماردو شاعریاردو غزلیاتافتخار شاہد

مانا کہ کوئی کام بھی اچھا نہیں کیا

افتخار شاہد کی ایک غزل

مانا کہ کوئی کام بھی اچھا نہیں کیا
لیکن تمہارے پیار کو رسوا نہیں کیا

مشکل پڑی تو آپ ہی نیلام چڑھ گئے
ہم نے پُرائی چیز کا سودا نہیں کیا

یاروں کا ہم سے ایک ہی شکوہ رہا سدا
ایسا نہیں کیا کبھی ویسا نہیں کیا

قصے میں جھوٹ سچ کی آمیزش تو کی مگر
تجھ سے تو یار کوئی بھی دھوکا نہیں کیا

چپ چاپ اپنی پیاس کے صحرا میں کھو گئے
دریا کے سامنے تو تماشا نہیں

ہم نے تو دوریوں سے بھی لذت کشید کی
اے حسنِ یار تجھ سے تقاضا نہیں کیا

ہم لوگ منظروں کی طرح عام ہو گئے
تُو نے تو اپنا راز ہی افشا نہیں کیا

افتخار شاہد

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button