آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعریطلعت سروہا

میکدہ بھی ہے غم کا گھر بابا

ایک اردو غزل از طلعت سروہا

میکدہ بھی ہے غم کا گھر بابا

اس لیے لگ رہا ہے ڈر بابا

میرے خوابوں کاجو محل تھا کبھی

ہو گیا وہ تو اب کھنڈر بابا

ایک صیاد کی طرح غم نے

نوچ ڈالے ہیں بال و پر بابا

لوگ کہتے ہے زندگی جس کو

کتنی مشکل ہے وہ ڈگر بابا

پوچھتے پھر رے ہیں دیوانے

ہے درِ میکدہ کدھر بابا

کوئ رہبر نہ ہمسفر کوئی

کیسے گزرے گا یہ سفر بابا

طلعت سروہا

طلعت سروہا

نام ۔ طلعت جہاں سروہا قلمی نام۔ طلعت سروہا افسانہ نگار، شاعرہ پیدائش۔ سہارنپور(یو پی ) تعلیم ۔ MA پہلی غزل خاتون مشرق میں شائع ہوئی تھی اور بشتر اخبارات میں بھی شائع ہوتی رہتی ہیں ۔ شاعری مجموعہ بہت جلد منظر عام پر آئے گا۔ زبان۔ اردو، ہندی، انگریزی

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button