- Advertisement -

خاک اڑتی ہے رات بھر مجھ میں

رحمان فارس کی ایک غزل

خاک اڑتی ہے رات بھر مجھ میں

کون پھرتا ہے در بدر مجھ میں

مجھ کو خود میں جگہ نہیں ملتی

تو ہے موجود اس قدر مجھ میں

موسم گریہ ایک گزارش ہے

غم کے پکنے تلک ٹھہر مجھ میں

بے گھری اب مرا مقدر ہے

عشق نے کر لیا ہے گھر مجھ میں

آپ کا دھیان خون کے مانند

دوڑتا ہے ادھر ادھر مجھ میں

حوصلہ ہو تو بات بن جائے

حوصلہ ہی نہیں مگر مجھ میں

رحمان فارس

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
رحمان فارس کی ایک غزل