آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعریمبشر سعید

جینا اب اور نہ دشوار بناؤ ، جاؤ

مبشر سعید کی ایک اردو غزل

جینا اب اور نہ دشوار بناؤ ، جاؤ
زندگی! درد کا سامان اٹھاؤ ، جاؤ

ہم محبت بھی عبادت کی طرح کرتے ہیں
واعظو! ہم کو عبادت نہ سکھاؤ، جاؤ

ہے ہمیں راس یہ گم نام جزیرے کی فضا
گر کمانا ہے تمہیں نام، کماؤ، جاؤ

ہم نے ہم وار بنا ڈالا ہے اُس کا رستہ
وادیِ عشق میں آرام سے آؤ ، جاؤ

تم کو اک ہجر نے بے حال سا کر رکھا ہے
جاؤ، ہم کو یہ کہانی نہ سناؤ، جاؤ

جو ہمہ وقت لگاتا تھا اَنا الحق کی صدا
وہی مجذوب ابھی ڈھونڈ کے لاؤ ، جاؤ

مت ڈرو دشت کے پر خوف علاقے میں سعید
آ گئے ہو تو یہاں خاک اڑاؤ ، جاؤ

مبشر سعید

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button