- Advertisement -

گرد اپنی اتارتا ہوں ذرا

مقصود وفا کی ایک اردو غزل

گرد اپنی اتارتا ہوں ذرا

یہ شب و روز جھاڑتا ہوں ذرا

کار دنیا کوئی رعایت کر

فرصت خواب چاہتا ہوں ذرا

اب میں اتنا بھی صبر والا نہیں

گاہے گاہے کراہتا ہوں ذرا

اک تو میں چاہتا ہوں تنہائی

اک ترا ساتھ چاہتا ہوں ذرا

کرنے والا ہے اک ستارہ کلام

تھوڑی دیر اور جاگتا ہوں ذرا

 

مقصود وفا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.

سلام اردو سے منتخب سلام
مقصود وفا کی ایک اردو غزل