آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعریمحمد رضا نقشبندی

ایک صورت ہو ، مسکراتے ہیں

محمد رضا نقشبندی کی ایک اردو غزل

ایک صورت ہو ، مسکراتے ہیں
جب ضرورت ہو ، مسکراتے ہیں

ہاتھ میں ہاتھ کندھے سے کندھا
یہ سہولت ہو ، مسکراتے ہیں

انکی بستی میں رسم ہے شاید
جب اجازت ہو ، مسکراتے ہیں

لاکھ طوفان ہوں یہی دیکھا
جن کی عادت ہو ،مسکراتے ہیں

چاند تاروں کی ایک مسند ہو
ایسی ساعت ہو ، مسکراتے ہیں

محمد رضا نقشبندی

محمد رضا نقشبندی

محمد رضا المصطفے قلمی نام محمد رضا نقشبندی رہائش کلاس والہ تحصیل پسرور ضلع سیالکوٹ

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button