آپ کا سلاماردو غزلیاتشعر و شاعری

دل میں ہر آس کی تصویر

سید محمد وقیع کی ایک غزل

تن
دل میں ہر آس کی تصویر بنا لیتے ہیں
اور اسے دل میں تڑپنے کی سزا دیتے ہیں
عید
میں تو خوشیوں کی مسرت کی خبر لاتی ہوں
ہاۓ کیوں لوگ مجھے سو کے گنوا دیتے ہیں
مزدور
عید کی چھٹّی ہی ملتی ہے کہ آرام کریں
تو چلو سو کے ذرا عید منا لیتے ہیں
اہلِ فلسطین
کیسے تسکین و مسرت ہو فلسطینی کو
لوگ مرتے ہیں وہ لاشوں کو اٹھا لیتے ہیں
ہم
ایک اک ظلم کی شاہد ہیں ہماری آنکھیں
پوسٹیں دیکھ کے انگلی سے ہٹا دیتے ہیں
یہودی
ہاۓ کیا لوگ ہیں مسلم جو ابھی تک ہیں چپ
خون سے جن کے یہودی بھی کما لیتے ہیں
حساس لوگ
لوگ سمجھے ہمیں بس پاگل و دیوانہ وقیع
چیخ میں ہم تو کئ درد چھپا دیتے ہیں

سید محمد وقیع

سید محمد وقیع

سید محمد وقیع تخلص وقیع رہائش اورنگی ٹاون کراچی تاریخِ پیدایش جون 2004

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button