آپ کا سلاماردو شاعریاردو غزلیاتشہناز رضوی

چھِڑا ہے ذکر تیری دلکشی کا

شہناز رضوی کی ایک اردو غزل

چھِڑا ہے ذکر تیری دلکشی کا
تِری آنکھوں کی مے کا ، مے کشی کا

وہ دلبر بھی کوئی دلبر ہے جس کو
نہیں آتا طریقہ دلبری کا

لُٹا دی جان ہم نے دوستی پر
صِلہ کیسا مِلا یہ دوستی کا

ازل سے ہی وہ دُشمن تھے ہمارے
نتیجہ سامنے ہے دُشمنی کا

جیئں کِس زندگی کے واسطے اب
مزہ باقی رہا کب زندگی کا

اندھیرے بس گئے ہیں دل کے اندر
گِلہ ہم کو نہیں تِیرہ شبی کا

کوئی چھیڑو غزل “ شہناز رِضوی “
مزہ آ جائے گا پھِر شاعری کا

شہناز رضوی

شہناز رضوی

نام :: شہناز رضوی تخلُّص :: شہناز سکونت :: کراچی پاکستان ادبی خدمات :: آن لائن طرحی مُشاعروں میں فیس بُک کے 9 گروپس میں 2013 سے شرکت کر رہی ہوں ۔ ایک شعری مجموعہ “ متاعِ زیست “ کے نام سے 2019 میں منظرِ عام پہ آ چُکا ہے ۔ اور اب دوسرا مجموعہ حمد و نعت کے حوالے سے بہت جلد آنے والا ہے ان شا اللہ ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

Back to top button