اردو غزلیاتسلیم کوثرشعر و شاعری

اب فیصلہ کرنے کی

سلیم کوثر کی ایک اردو غزل

اب فیصلہ کرنے کی اجازت دی جائے

یا پھر ہمیں منزل کی بشارت دی جائے

دیوانے ہیں ہم جھوٹ بہت بولتے ہیں

ہم کو سر بازار یہ عزت دی جائے

پھر گرد مہ و سال میں اٹ جائیں گے

آئینہ بنایا ہے تو صورت دی جائے

اصرار ہی کرتے ہو تو اپنا سمجھو

دینا ہی اگر ہے تو محبت دی جائے

وہ جس نے مجھے قتل پہ اکسایا تھا

اس شخص سے ملنے کی بھی مہلت دی جائے

جب میری گواہی بھی مرے حق میں نہیں

پھر شہر میں کس کس کی شہادت دی جائے

ہم جاگتے رہنے کے بہت عادی ہیں

ہم کو شب ہجراں کی مسافت دی جائے

چھڑ جائے تو طبقات کی اب جنگ سلیمؔ

کچھ بھی ہو مگر ہم کو نہ زحمت دی جائے

 

سلیم کوثر

سائٹ ایڈمن

’’سلام اردو ‘‘،ادب ،معاشرت اور مذہب کے حوالے سے ایک بہترین ویب پیج ہے ،جہاں آپ کو کلاسک سے لے جدیدادب کا اعلیٰ ترین انتخاب پڑھنے کو ملے گا ،ساتھ ہی خصوصی گوشے اور ادبی تقریبات سے لے کر تحقیق وتنقید،تبصرے اور تجزیے کا عمیق مطالعہ ملے گا ۔ جہاں معاشرتی مسائل کو لے کر سنجیدہ گفتگو ملے گی ۔ جہاں بِنا کسی مسلکی تعصب اور فرقہ وارنہ کج بحثی کے بجائے علمی سطح پر مذہبی تجزیوں سے بہترین رہنمائی حاصل ہوگی ۔ تو آئیے اپنی تخلیقات سے سلام اردوکے ویب پیج کوسجائیے اور معاشرے میں پھیلی بے چینی اور انتشار کو دورکیجیے کہ معاشرے کو جہالت کی تاریکی سے نکالنا ہی سب سے افضل ترین جہاد ہے ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

متعلقہ اشاعتیں

سلام اردو سے ​​مزید
Close
Back to top button